اداریہ

2016 کی مردم شماری کے مطابق کینیڈا میں 2لاکھ 15ہزار سے زائد  دوہری شہریت کے حامل پاکستانی بستے ہیں۔جبکہ آٹواہ میں پاکستانی ہائی کمیشن نے میری ای میل کے جواب میں تصدیق کی ہے کہ ان کے علاوہ تعلیم، ملازمت، عارضی ویزہ اور کینیڈا میں پیدا ہونے پاکستانیوں کو شامل کرکے تقریبا پانچ لاکھ پاکستانی کینیڈا میں بستے ہیں۔   بیرونِ ملک پیدا ہونے والے پاکستانیوں کی سب سے بڑی تعداد کینیڈا میں بستی ہے۔ یہ پاکستانی کینیڈا کے ہر شعبہ زندگی میں نظرآئیں گے۔ فیکٹریوں میں کام کرتے مزدوروں، سرکاری دفاترمیں کام کرتے ملازم اور پارلیمنٹ میں عوام کی نمائندگی کرتے نمائندے۔ یہ پاکستانی خواہ کس غرض سے کینیڈا میں رہتے ہوں، ان کے دِل پاکستان کے ساتھ دھڑکتے ہیں۔لیکن کیا آپ نے کبھی کسی کینیڈین سے سنا ہے کہ ’’ان پاکستانیوں کی کینیڈا سے وفاداری مشکوک ہے!‘‘ کیا آپ نے کبھی کسی کینیڈین سے سُنا ہے کہ ’’جو پاکستانی کینیڈین، پاکستان میں پیدا ہوئے، جن کے تمام رشتے پاکستان میں ہیں، جن کی زمینیں جائیدادیں پاکستان میں، جو ہمارے ڈالر پاکستان بھیج دیتے ہیں، ان کی کینیڈا سے وفاداری مشکوک ہے!‘‘ 

لیکن پاکستان میں یہ کہا جاتا ہے کہ چونکہ آپ نے کینیڈا میں ملکہ برطانیہ سے حلفِ وفاداری لیا ہے لہذا آپ کی پاکستان سے وفاداری مشکوک ہوگئی ہے۔ آپ پاکستان میں پیسے بھیجتے رہیں لیکن یہاں کے کاروبارِ حکومت میں دخل نہ دیں۔

میرا پہلا سوال یہ ہے کہ جب آئین پاکستان تمام پاکستانیوں کو دہری شہریت کا حق دیتا ہے تو آپ کس بنیاد پر کسی شخص کو اس کے پاکستانی حق سے مثلاً ممبر قومی اسمبلی بننے سے کیسے روک سکتے ہیں؟

آپ کو علم ہونا چاہیے کہ انسان بیک وقت ایک سے زیادہ لوگوں، ایک سے زیادہ اداروں اور ایک سے زیادہ ملکوں کا وفادار ہوسکتا ہے۔

اور  اُن دانشوروں سے ، جو بیرونِ ملک بسنے والے پاکستانیوں سے ازراہِ ہمدردی ، یہ کہتے ہیں کہ بیرونِ ملک رہنے والے پاکستانی ،ملکہ سے (یا اپنے نئے ملک سے)  سے وفاداری کا حلف رسماً لیتے ہیں، صرف کاغذی کارروائی کے لئے ۔ ورنہ وہ صرف اور صرف پاکستان سے وفادار ہوتے ہیں، ایسے دانشوروں اور ہمدردوں سے گذارش ہے کہ آپ کی حمایت کا شکریہ مگر یادرکھیں ہم جس ملک کی شہریت حاصل کرتے ہیں، جیسے میں نے کینیڈا کی شہریت حاصل کی ہے، اس کے وفاردار ، دل کی گہرائیوں سے وفادار ہوتے ہیں۔  آپ ہمیں ان ممالک کی نظر میں مشکوک مت کریں۔

آخر میں ایک سوال چھوڑے جارہا ہوں۔ ہمارے وہ بچے جو کینیڈا میں پیدا ہوئے ، وہ بوقتِ پیدائش کینیڈا اور پاکستان کے بیک وقت شہری قرار پائے۔ انہیں کسی حلف کی ضرورت بھی نہیں ہے۔ ان بچوں کے پاکستانی پارلیمنٹ میں جانے میں کیا روک ہے؟